گالی

علی ارقم

bus

بس میں پچھلے اسٹاپ سے سوار ہونے والا مُسافر مُسلسل اصرار کیئے جارہا تھا کہ کنڈیکٹر نے اُس سے دو روپے زائد لیئے ہیں جب بار بار تقاضے کے باوجود اُس نے وہ دو روپے واپس نہیں کیئے تو کافی دیر تک زیر لب بڑبڑاتا رہا اور پھر کنڈیکٹر کی قومیت کا حوالہ دے کرایک موٹی سی گالی دی اور خاموش ہوگیا۔
اگلے اسٹاپ پر ایک نوجوان لڑکا سوار ہوا جس نے آٹو ورکشاپس پر کام کرنے والے مزدوروں جیسے کپڑے پہن رکھے تھے۔ وہ بس میں سوار ہونے کے بجائے گاڑی کے پچھلےدروازے میں ہی لٹکا رہا۔
کنڈیکٹر نے اُس سے کرائے کا تقاضا کیا تو اُس نے سُنی ان سُنی کردی۔ کنڈکٹر نے دوبارہ کرایہ مانگا تو اُس نے کہا کہ میں بس اگلے اسپیڈ بریکر پر اُتر رہا ہوں ۔ اس پر کنڈیکٹر نے تپ کر اُسے سنانا شروع کیں پر وہ یوں ہی کھڑا رہا بلکہ جب اگلا اسٹاپ آیا تو اُس نے باقاعدہ کنڈیکٹر کی طرح گلاپھاڑ پھاڑ کر آوازیں بھی لگانا شروع کردیں ۔ زچ ہوکر کنڈیکٹر اگلےدروازے پر چلا گیا۔
کچھ آگے جاکر وہ لڑکا اُتر گیا اس بار کنڈکٹر بڑبڑایا اور اُس کی قومیت اور نشئی ہونے کا ذکر کرکے اُسے ایک موٹی گالی دے ڈالی۔

ali arqam
Ali Arqam