چوہدری ظفر اللہ خان صاحب کا بحیثیث وزیر خارجہ تقرر ۔ ایک سازش؟

تحریر : ڈاکٹر مرزا سلطان احمد

مورخہ 10اکتوبر 2017کو کیپٹن (ریٹائرڈ) صفدر صاحب نے پاکستان کی قومی اسمبلی میں ایک تقریر کی ۔موجودہ حالات کے دباو¿ کی وجہ سے غالبا وہ َ شدید ذہنی دباو¿ میں تھے کیونکہ بے ربط ہونے کے علاوہ اس تقریر میں وہ کئی ایسی باتیں بھی کہہ گئے ، جن کے متعلق وہ اب خود بھی محسوس کر رہے ہوں گے کہ وہ نہ ہی کہتے تو بہتر تھا۔ بہر حال یہ تقریر قومی اسمبلی میں کی گئی تھی اور پورے ملک کے الیکٹرانک میڈیا نے اسے نشر کیا تھا ، اس لیے اس کے کئی حصوں پر تبصرہ کرنا اور حقائق پیش کرنا ضروری ہے۔اس تحریر میں ان کے اس حصے پر تبصرہ کیا جا رہا ہے ، جس میں انہوں نے کہا

”سازشیوں نے مل کر سر ظفر اللہ آف سیالکوٹ کو فارن منسٹر بنایا ۔“

خدا جانے صفدر صاحب کس رو میں یہ عجیب الخلقت بیان دے بیٹھے ۔کیا وہ نہیں جانتے کہ اس وقت ملک کے گورنر جنرل اور مسلم لیگ کے صدر بانی ِ پاکستان قائدِ اعظم محمد علی جناح تھے اور وزیر ِ اعظم لیاقت علی خان صاحب تھے ۔ ظاہر ہے کہ کابینہ میں کس کو کس عہدے پر مقرر کرنا ہے اس کا فیصلہ ان دونوں قائدین نے ہی کرنا تھا ۔ کیا کیپٹن(ر) صفدر صاحب ان دونوں کو سازشی قرار دے رہے ہیں۔ اس بات پر حیرانی ہوتی ہے کہ اس قسم کی تقریر سن کر ممبران ِ اسمبلی ڈیسک بجا بجا کر داد دے رہے تھے ۔ ویسے تو کوئی بھی معقول شخص اس لغو دعوے کی تائید نہیں کر سکتا لیکن کیا صفدر صاحب یہ نہیں جانتے کہ پاکستان بننے کے فوراََبعد قائد ِ اعظم نے چوہدری ظفر اللہ خان صاحب کو اقوام ِ متحدہ میں پاکستان کی نمایندگی کرنے کے لیے بھجوایا تھا۔ اور اس وقت فلسطین کا اہم مسئلہ اقوام متحدہ میں پیش ہورہا تھا اور جب اقوام متحدہ میں پاکستان کے سفارتکار اصفہانی صاحب نے قائد ِ اعظم سے درخواست کی کہ ابھی چوہدری ظفر اللہ خان صاحب کو وہاں سے واپس نہ بلایا جائے تو قائد ِ اعظم نے انہیں لکھا

“As regards Zafrullah, we do not mean that he should leave his work so long as it is necessary for him to stay there….but naturally we are very short here of capable men, and especially of his calibre, and every now and then our eyes naturally turn to him for various problems that we have to solve.”
(Jinnah Papers vol 6,p 165)

ترجمہ: جہاں تک ظفر اللہ کا تعلق ہے تو ہمارا مطلب یہ نہیں تھا کہ وہ اُس وقت اپنا کام چھوڑ کر آجائے جب اس کا وہاںٹھہرنا ضروری ہو۔۔۔مگر قدرتی بات ہے کہ یہاں ہمارے پاس خاص طور پر اس کے پائے کے قابل آدمیوں کی شدید کمی ہے۔اور جب بھی ہمیں کسی مسئلہ کا سامنا کرنا پڑتا ہے تو اسے حل کرنے کے لیے ہماری نظریں قدرتی طور پر اُس کی طرف اُٹھتی ہیں۔

جب چوہدری ظفر اللہ خان صاحب اقوام ِ متحدہ سے واپس پاکستان پہنچے تو قائد ِ اعظم نے تفصیلی طور پر اُن سے ملاقاتیں کیں اور اور ان کی کارکردگی کا جائزہ لیا اور اصفہانی صاحب کو لکھا


©”Zafrullah is back and I had long talks with him.Yes he has done well.”
(Jinnah Papers Vol 6,p403)

ترجمہ: ظفراللہ واپس آگئے ہیں ۔ میں نے ان سے طویل ملاقاتیں کی ہیں۔ ہاں! اس نے اچھا کام کیا ہے۔

یہ خط11ستمبر 1947کو لکھا گیا تھا ۔ اور اس کے دو ہفتہ کے بعد قائد ِ اعظم نے خود چوہدری ظفر اللہ خان صاحب سے وزارت ِ خارجہ کا حلف لیا ۔تو صفدر صاحب غور فرمائیں کہ چوہدری ظفر اللہ خان صاحب کو وزیر خارجہ بنانے کا پس منظر تو یہ تھا کہ قائد ِ اعظم کے نزدیک پاکستان میں ان کی قابلیت کے آدمیوں کی شدید کمی تھی اور جب بھی پاکستان کو کوئی مسئلہ پڑتا تھا تو اس کو حل کرنے کے لیے نظریں چوہدری ظفر اللہ خان صاحب کی طرف اُٹھتی تھیں۔ تو حقیقت تو یہ ہے کہ صفدر صاحب قائد ِ اعظم پر پاکستان کے خلاف سازش کرنے کا الزام لگا رہے ہیں۔ اور قائد ِ اعظم ایک طویل عرصہ سے چوہدری ظفر اللہ خان صاحب سے بخوبی واقف تھے۔ 1939میںجب چوہدری ظفر اللہ خان صاحب وائسرائے کونسل میں وزیر تھے تو قائد اعظم نے مرکزی اسمبلی میںتقریر کرتے ہوئے آپ کے متعلق فرمایا تھا


©”اس موضوع پر مزید کچھ کہنے سے قبل میں اپنی اور اپنی پارٹی کی طرف سے آنریبل سر ظفر اللہ خان کو ہدیہ تبریک پیش کرتا ہوں ۔ وہ مسلمان ہیں اور یوں کہنا چاہیے کہ میں گویا اپنے بیٹے کی تعریف کر رہا ہوں۔مختلف حلقوں نے اُ ن کو جو مبارک باد دی ہے میں اس کی تائید کرتا ہوں۔ اس میں کوئی شک نہیں کہ جو کچھ امکانی حد تک ہو سکتا تھا انہوں نے اس میں کوئی دقیقہ فروگذاشت نہیں کیا©“

(ہماری قومی جدو جہد [جنوری 1939سے دسمبر 1939تک ، مصنفہ عاشق حسین صاحب بٹالوی ، پاکستان ٹائمز پریس لاہور۔ص76)
ہماری صفدر صاحب سے گذارش ہے کہ ذرا روشنی ڈالیں کہ یہ کس کی سازش تھی؟

One thought on “چوہدری ظفر اللہ خان صاحب کا بحیثیث وزیر خارجہ تقرر ۔ ایک سازش؟

  • October 21, 2017 at 11:36 pm
    Permalink

    Is it true that he didn’t join Quaid’s funeral?

    Saying that Quaid is not an Ahmadi.

Comments are closed.